breaking news New
دنیا کے خوبصورت ترین شہر

دنیا کے دس خوبصورت ترین شہر

یوں تو دنیائے انسانیت نے وقت کے ساتھ ساتھ ہر شعبہ زندگی میں تیزی سے اپنی ارتقائی منازل طے کی ہیں۔۔ جس میں سے ایک شعبہ زندگی معاشرے آباد کرنے کے لئے فن تعمیر بھی ہے جس نے مختلف شہروں کو اس حسن سے نوازا جس کی بدولت بہترین ماحول اور خوشگوار زندگی کا حصول ممکن ہو سکے اس دنیا میں ہم دیکھتے ہیں کہ ایسے شہر بھی ہیں جن میں زندگی کی رعنائیاں انسانی دست شاہکار کے طور پر دلوں کو لبھاتی ہیں ۔۔۔
ایسے ہی دس خوبصورت ترین شہروں کا ہم مختصر جائزہ پیش کرتے ہیں ۔

بروجیز
بیلجیم

بیلجیئم کے صوبے ویسٹ فلینڈزمیں واقع 138 مربع کلومیٹر پر پھیلا ہوا یہ شہر اپنی انفرادیت کی بدولت دنیا کے حسین ترین شہروں میں شمار ہوتا ہے یہ شہر انسانی خوابوں کی ایک مجسم تعبیر کی صورت میں سیاحوں کے لیے ازخود کشش کا باعث ہے یہ شہر جس کا بیشتر حصہ پانی پر آباد ہے اور ایک مقام سے دوسرے مقام تک جانے کے لئے کشتی کا سہارا لینا پڑتا ہے گویا اس کے محلے پختہ سڑکوں کی بجائے آبی گلیوں کے ذریعے ایک دوسرے سے ملے ہوئے ہیں قدیم شہر ہونے کی بدولت یہاں متعدد تاریخی عمارات ہیں جن میں سے “چرچ آف دا ویجرج میری” سمیت کئی دیگر عمارات اس شہر کی خوبصورتی کا باعث ہیں ۔۔ جب کہ سب سے زیادہ پر کشش اور خوبصورت امارت بیل ٹاور کی ہے جو کہ تیرہویں صدی میں تعمیر ہوئی اور اس میں آج بھی 48 گھنٹیاں موجود ہیں۔۔

۔Budapest,
Hungary

525 مربع کلومیٹر پر پھیلا ہوا ہینگری کا یہ دارالخلافہ یورپی یونین کا سب سے بڑا شہر تسلیم کیا جاتا ہے۔جو کہ اپنے ملک کا تہذیبی اور سیاسی مرکز ہونے کا حامل بھی ہے۔اس شہر کو رومن عہد کے فورا بعد نویں صدی میں ایجاد کیا گیا تھا۔اور یہاں آج بھی ایسی کئی قدیی عمارات ہیں جو عالمی ورثے کا حصہ ہیں ۔یہاں کا قابل تعریف مقام ہینگری کا وہ زیرے زمین ریلوے اسٹیشن ھے۔جیسے دنیا کا دوسرا قدیم ترین ریلوے نظام کہا جاتا ہے۔اس مقام کو ہر سال دنیا کے مختلف ممالک سے تقریباً 4.3 ملین لوگ دیکھنے آتے ہیں۔اس کے علاؤہ یہ شہر کھیلوں کا مرکز بھی ہے۔جہاں پر فٹبال کے سات پروفیشنل کلب موجود ہیں۔۔ یہ شہر اولمپک گیمز کے علاؤہ مختلف چیمپئن ٹورنامنٹ کی بھی میزبانی کرتا ہے۔۔

روم،
اٹلی۔

یورپی ملک اٹلی میں 1285 مربع کلومیٹر پر پھیلا ہوا یہ شہر جس کے بارے میں یہ کہاوت مشہور ہے
۔
ROM wasn’t built in a day..

یہ تاریخی شہر جس کو اٹلی کا دارالخلافہ ہونے کا اعزاز حاصل ہے۔بنیادی طور پر کیتھولک عیسائیوں کا وہ شہر ھے۔جو نہ صرف منفرد اور عالیشان گرجا گھروں کی وجہ سے مشہور ہے۔بلکہ اس کی تاریخی وراثت بھی روم کا ایک تاریخی اثاثہ ہے۔جس کے کھنڈرات آج بھی اپنی عزم رفتہ کی مثال کے طور پر موجود ہیں۔اگر آپ کو اس شہر میں جانے کا اتفاق ہو تو آپ محسوس کریں گے کہ یہاں پر واقعی ایسا جادوئی ماحول ھے۔جہاں پر نہ صرف آپ آرام کر سکتے ھیں۔بلکہ بہت کچھ دیکھ اور سیکھ بھی سکتے ہیں۔۔

Lisbon,
Portugal

معروف یورپی ملک پرتگال کا یہ دارالخلافہ لیسبن جس کو مورخین تاریخی حوالے سے پاکستان کے شہر پشاور کا جڑواں شہر بھی کہتے ہیں۔ یورپی یونین کے گیارہ خوبصورت ترین شہروں میں شمار ہوتا ہے۔ جو کہ تجارت ،تعلیم ،تفریح اور میڈیا کی سرگرمیوں کے حوالے سے بے مثال شہرت کا حامل ہے۔ یہ شہر نہ صرف دنیا کے انتہائی قدیم شہروں میں شامل ہے۔بلکہ یہ دنیا کے خوبصورت ترین شہروں میں سے ایک تسلیم کیا جاتا ہے۔ جو کہ سیاحوں کے لئے خاص طور پر کشش کا باعث ہے۔

وینس
،اٹلی

اسے 2014 میں دنیا کا خوبصورت ترین شہر ہونے کا خطاب ملا۔ یہ اٹلی کے شمال مشرقی علاقے میں واقع ایسا شہر ہے ۔ جو نہ صرف اپنے اندر کئی عالمی ورثے سمیٹے ہوئے ہیں۔ بلکہ دنیا کے حسن شناس اس کو مختلف ناموں مثال کے طور پر سٹی آف واٹر،سٹی آف چینل اور سٹی آف میوزک کے ناموں سے بھی یاد کرتے ہیں۔ٹائمز میگزین کے مطابق اس شہر کا شمار یورپ کے رومانوی شہروں میں ہوتا ہے یوں تو اس شہر کی خوبصورتی اور انفرادیت کی دیگر بھی کی علامات ہیں لیکن اگر آپ کو یہاں جانے کا اتفاق ہو تو آپ دیکھیں گے آپ کو یہاں سفر کے لیے کوئی کار یا گاڑی وغیرہ نہیں مل سکتی بلکہ یہاں پر صرف کشتیوں کے ذریعے ہی ایک سے دوسری جگہ آیا جا سکتا ہے وینس دنیا کا وہ شہر ہے جس کی شاہراہیں اور گلیاں پانی کے راستوں پر مشتمل ہیں ۔۔

Florence,
Italy

اٹلی کو چار چاند لگانے والا یہ شہر اٹلی کا دارالخلافہ ہے یورپ کی تجارت اور فنانس کا مرکز سمجھا جاتا ہے یہ شہر عجائب گھروں محلات اور یادگاروں سے بھرا پڑا ہے اس شہر کے درمیان پانی میں تیرتی ہوئی کشتیاں دلفریب اور دلکش نظارہ پیش کرتی ہیں اس کی خوبصورتی دنیا میں اس قدر مشہور ہے کہ کروڑوں سیاح اس شہر کے نظاروں سے لطف اندوز ہونے چلے آتے ہیں ۔۔تاریخی اعتبار سے یونیسکو نے انیس سو بیاسی میں اسے ہسٹوریک سینٹر آف فلورنس کا خطاب بھی دیا ہے اور اگر بات کی جائے اٹالین جشن کی تو وہ بھی فلورنس کی مرہون منت ہےاستنبول،ترکی
یہ ایشیائی اور یورپی ثقافت کا حسین امتزاج ہے سیاح یہاں اکر ایشین اور یورپین دونوں تہذیبوں سے لطف اندوز ہوسکتے ہیں یہ ایک تہذیبی شہر بھی ہے اور مسلم ثقافت کے فن پاروں سے بھرا پڑا ہے۔سیاح یہاں قدیم ورثے کے ساتھ ساتھ جدید طرز تعمیر کا مشاہدہ بھی کر سکتے ہیں

Prague
, Czech Republic

دنیا کا تیسرا خوبصورت ترین شہر ہے اس کو دنیا کا صاف ستھرا ترین شہر بھی کہا جاتا ہے اور یورپ کا چودہواں بڑا شہر بھی ہے ۔اس کے علاوہ اس کو دنیا کے خوشحال ترین شہروں میں بھی شامل کیا جاتا ہے۔۔ اس کی وجہ یہاں کی کم ترین شرح بے روزگاری ہے ایک اندازے کے مطابق یہاں پہ بے روزگار افراد کی شرح 2 فیصد ہے یہ ایک تاریخی اور ثقافتی شہر ہے یہاں تاریخی عمارتیں بہترین پل اور کئی دوسرے فن تعمیر کی چیزیں دیکھنے کو ملتی ہیں اس لیے اسے دنیا کا تیسرا خوبصورت ترین شہر قرار دیا ہے۔

پیرس
،فرانس

دنیا کا دوسرا خوبصورت ترین شہر ہے پیرس کا نام سنتے ہی ایفل ٹاور کا نام یاد آتا ہے جو کہ بلاشبہ پیرس کی ہی نہیں بلکہ فرانس کی بھی پہچان ہے۔۔ پیرس کی دلکش خوبصورتی اور شاندار فن تعمیر کی وجہ سے اسے سٹی آف لو اینڈ رومانس بھی کہا جاتا ہے پیرس ایک تاریخی شہر ہے اور تاریخی عمارتوں سے بھرا پڑا ہے یہاں کی آرٹ گیلریاں اور عجائب گھر بھی دیکھنے کے لائق ہیں لیکن آج کے دور میں پیرس اپنے جدید فیشن کی وجہ سے بھی خاصی مقبولیت رکھتا ہے اس لیے اسے بعض اوقات ہوم اوف ماڈرن فیشن بھی کہا جاتا ہے
۔

کیپ ٹاؤن
جنوبی افریقہ

یہ جنوبی افریقہ کا تیسرا سب سے بڑا شہر ہے۔اور مغربی کیپ صوبے کا دارالحکومت ہے۔ اور جنوبی افریقہ کا قانون ساز دارالحکومت بھی ہے۔یہاں قومی پارلیمان اور کئی اہم سرکاری دفاتر واقع ہیں۔ ۔یہ شہر اپنی مشہور بندرگاہ کے ساتھ اپنی جغرافیائی حدود کی وجہ سے ایک معروف حیثیت کا حامل ہے۔اسے جغرافیائی لحاظ سے کئی بار دنیا کا خوبصورت ترین شہر قرار دیا گیا ہے۔مگر اس فہرست میں اس کی خوبصورتی کو خاطر میں رکھتے ہوئے اسے پانچویں نمبر پر رکھا گیا ہے۔کیپ ٹاؤن جنوبی افریقہ میں سیاحت کا اہم مقام سمجھا جاتا ہے۔قدرتی مناظر کے حوالے سے اسے شکست دینا آسان نہیں یہاں موجود ٹیبل ماؤنٹین اور وسیع سمندر اس شہر کو دنیا کے خوبصورت ترین شہروں کی فہرست میں لا کھڑا کرتے ہیں۔

استنبول
،ترکی

یہ ایشیائی اور یورپی ثقافت کا حسین امتزاج ہے۔سیاح یہاں آکر ایشین اور یورپین دونوں تہذیبوں سے لطف اندوز ہو سکتے ہیں۔ یہ ایک تہذیبی شہر بھی ہے۔ اور مسلم ثقافت کے فن پاروں سے بھرا ھے۔ یہاں سیاح قدیم ورثے کے ساتھ جدید طرز تعمیر کا مشاہدہ بھی کر سکتے ہیں۔

<

0 Comments

Leave a Comment

Login

Welcome! Login in to your account

Remember me Lost your password?

Lost Password