breaking news New
دنیا کے دس بہترین کھیل - بتول تالپور - سحرڈاٹ ٹی وی - اردو بلاگز

دنیا کے دس بہترین کھیل

انسانی زندگی میں کھیلوں کی ہمیشہ سے بہت اہمیت رہی ہے ۔ مختلف جسمانی کھیل نہ صرف انسان کی تفریح کا باعث بنتے ہیں بلکہ جسمانی اور ذہنی صحت و نشونما میں بھی اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ ہر انسان اپنی پسند کے مطابق کھیل کھیلتا ہے ۔ کچھ لوگ محض وقت گزاری یا پھر تفریح کی غرض سے کھیلنا یا دیکھنا پسند کرتے ہیں تو کچھ لوگ اپنی پسند کو پیشہ بنا کر دنیا میں اپنی الگ پہچان بنا لیتے ہیں ۔
دنیا میں جتنے بھی کھیل کھیلے جاتے ہیں ان سب کی اپنی اپنی اہمیت ہے مگر ظاہر ہے کہ ایک کالم میں سب کو تفصیل سے بیان کرنا ممکن نہیں ۔ اس کالم میں ہم ان دس جسمانی کھیلوں پر روشنی ڈالیں گے جو دنیا میں عمومی طور پر مشہور بھی ہیں اور زیادہ تر لوگوں کی توجہ اور پسند کا مرکزبھی ہیں ۔

والی بال

ایک وقت تھا جب یہ کھیل صرف مرد حضرات کھیلا کرتے تھے ۔ مگر اب والی بال نہ صرف مرد بلکہ خواتین میں بھی پسند کیا جاتا ہے ۔ کھلاڑیوں کی تعداد ہر ٹیم کے لئے اس کھیل میں پانچ یا چھ ہوتی ہے ۔ والی بال میدان یا پارک میں نیٹ لگا کر کھیلا جاتا ہے ۔ جن تعلیمی اداروں میں جگہ کی کمی ہو یا بڑے میدان نہ ہوں وہاں بھی اب یہ کھیل کسی بڑے کمرے یا ہال میں کھیلا جاتا ہے ۔ امریکہ اس کھیل کو پسند کرنے والے ممالک میں سرِ فہرست ہے البتہ دوسرے ممالک میں بھی بڑے شہر ہوں یا گاٶں دیہات ، والی بال ہر جگہ یکساں پسند کیا جاتا ہے ۔

رگبی

رگبی کھیل میں بیضوی شکل کی بال استعمال ہوتی ہے اور دونوں ٹیموں میں پندرہ پندرہ کھلاڑی ہوتے ہیں ۔ اس کھیل کو کھیلنے کے لئے کھلاڑیوں کا چست، تندرست و صحت مند ہونا لازم ہے ۔ رگبی بال جب ہوا میں اچھل رہی ہو یا زمیں پر لڑھک رہی ہوتی ہے تو کھلاڑی اسے ہاتھ میں اٹھا کر گول کرنے کے لئے بھاگتا ہے جب کہ مخالف ٹیم کے کھلاڑی اس کا پیچھا کر کے روکنے کی کوشش کرتے ہیں۔ عالمی مقابلوں میں نیوزی لینڈ، ارجنٹینا، آسٹریلیا اور جنوبی افریقہ کی ٹیموں نے اس کھیل میں اپنا نمایاں مقام بنا لیا ہے۔ یہ کھیل بھی کچھ عرصہ پہلے تک مردوں کا کھیل سمجھا جاتا رہا ہے ۔ مگراب خواتین میں بھی مقبولیت حاصل کرچکا ہے۔

گولف

اسکاٹ لینڈ کا قومی کھیل گولف، دنیا کا سب سے مہنگا ترین کھیل مانا جاتا ہے ۔ نہ صرف اس کھیل میں استعمال ہونے والے آلات مہنگے ہوتے ہیں بلکہ اس کھیل کے لئے خوبصورت اور باریک گھاس کے میدانوں کی ضرورت ہوتی ہے ۔ گولف کےان میدانوں کی دیکھ بھال اور حفاظت پر بھی بہت خرچہ آتا ہے۔
سرسبز گھاس کے میدانوں میں کھیلے جانے والے اس کھیل کی دلچسپ بات یہ ہے کہ سب سے کم سکور کرنے والا کھلاڑی اس کھیل میں فاتح قرار پاتا ہے۔ اور اس کھیل میں کوٸی ایمپائر بھی نہیں ہوتا کھلاڑی خود سکور نوٹ کرتے ہیں۔
یہ کھیل اگرچہ مہنگا ہے اور زیادہ تر امیرطبقے کے لوگ کھیلتے ہیں۔ مگر وقت کے ساتھ ساتھ دنیا بھر میں گولف کو پسند کرنے والے لوگوں کی شرح میں اضافہ ہوتا دکھائی دیتا ہے۔

ہاکی

ہاکی دنیا کے قدیم کھیلوں میں شمار ہوتی ہے۔ اس کھیل میں ہر ٹیم گیارہ کھلاڑیوں پر مشتمل ہوتی ہے۔ کھیل کا دورانیہ ستر منٹ ہوتا ہے ۔ مقررہ وقت میں زیادہ گول کرنے والی ٹیم فاتح قرار پاتی ہے۔ یہ کھیل دنیا کے مختلف ممالک مثلاً یورپ ، آسٹریلا وغیرہ میں بھی پسند کیا جاتا ہے ۔ ہاکی پاکستان اور انڈیا دونوں ممالک کا قومی کھیل بھی ہے ۔

باسکٹ بال

اس کھیل میں کھلاڑیوں کو عموماً ان کے قد اور چست جسامت کی بنیاد پر چنا جاتا ہے۔ کیونکہ کھلاڑیوں کو اوپر لگی ہوٸی باسکٹ میں بال ڈال کر اپنی ٹیم کے لئے اسکور بنانا پڑتا ہے۔ اس کھیل میں ہر ٹیم کے پانچ کھلاڑی ہوتے ہیں۔ویسے تو اس کھیل کو دنیا بھر میں مقبولیت اور پسندیدگی حاصل ہے البتہ امریکی عوام باسکٹ بال میں دلچسپی لینے والوں میں سرِ فہرست ہے ۔

ٹیبل ٹینس

اس کھیل میں استعمال ہونے والی ٹیبل پر بیچ میں نیٹ لگا ہوتا ۔اس کھیل میں ایک ٹینس بال اور چھوٹی ریکٹس درکار ہوتی ہیں ۔ٹیبل ٹینس میں ہر ٹیم میں ایک یا زیادہ سے زیادہ دو کھلاڑی ہوتے ہیں ۔ یہ دنیا کے تیز رفتار کھیلوں میں سے ایک ہے کیونکہ کہ اس کھیل میں بہت تیزی اور مہارت کے ساتھ کھلاڑی کو بال ریکٹ کی مدد سے مخالف سمت اچھالنی ہوتی ہے۔ تعلیمی اداروں سے لے کر اولمپکس کھیلوں تک اس کھیل کی ہر جگہ ایک نمایاں حیثیت ہے ۔ ٹیبل ٹینس کھیلنے ، پسند کرنے اور اولمپکس کھیلوں میں حصہ لے کر نمایاں کامیابی لینے والوں میں چِین اول نمبر پر ہے۔

بیس بال

بیس بال کرکٹ سے ملتا جلتا کھیل ہے۔ اس میں بھی کرکٹ کی طرح ایک بلا اور بال استعمال ہوتی ۔ ہر ٹیم نو کھلاڑیوں پر مشتمل ہوتی ہے۔ یہ کھیل کینیڈا، کیوبا اور امریکہ وغیرہ جیسے ممالک میں کھیلا جاتا ہے اور بہت سے لوگوں کی دلچسپی، پسند اور توجہ کا مرکز ہے ۔

ٹینس

ٹینس پہلی مرتبہ انگلستان میں کھیلا گیا تھا ۔ریکٹس اور بال کی مدد سے کھیلا جانے والا یہ کھیل دنیا بھر کے مختلف ممالک میں بہت پسند کیا جاتا ہے۔ یہ کھیل گھاس سے بنے میدان میں کھیلا جاتا ہے ، جسے ٹینس کورٹ کہتے ہیں۔ اس کھیل میں ٹیبل ٹینس کی طرح ایک یا دو کھلاڑی ہر ٹیم میں ہوتے ہیں ۔ عالمی سطح کے علاوہ تعلیمی اداروں میں بھی اس کھیل کو نمایاں حثیت حاصل ہے ۔

 کرکٹ

کرکٹ پہلی بار سولہویں صدی میں کھیلا گیا۔ اس کھیل کی ٹیم گیارہ کھلاڑیوں پر مشتمل ہوتی ہے ۔ ایک زمانے میں یہ صرف انگریزوں کے لئے مخصوص سمجھا جاتا تھا اور انگلینڈ کا قومی کھیل بھی کرکٹ ہے۔ مگروقت کے ساتھ اس کھیل کی مقبولیت پوری دنیا میں اب اپنے عروج پر پہنچتی دکھائی دیتی ہے۔ گلی محلوں سے لے کر عالمی سطح پر کرکٹ کے مقابلے منعقد کئے جاتے ہیں۔ اس کھیل کو بھی مرد اور خواتین میں بھی پسندیدگی اور مقبولیت حاصل ہے ۔

 فٹ بال

دنیا میں سب سے زیادہ مقبول اور پسند کیا جانے والا کھیل فٹ بال ہے ۔ فٹ بال انیسویں صدی میں پہلی بار کھیلا گیا تھا ۔ اس کھیل میں کھیلنے والے کھلاڑیوں کی تعداد بشمول گول کیپر گیارہ ہوتی ہے ۔ فیفا ورلڈ کپ کے دنوں میں شائقین کا جوش اور ولولہ دیکھنے لائق ہوتا ہے ۔ دنیا بھر میں پسندیدہ اور مقبول ترین جسمانی کھیلوں میں فٹ بال سرِ فہرست ہے۔

<

0 Comments

Leave a Comment

Login

Welcome! Login in to your account

Remember me Lost your password?

Lost Password